آسٹریلیا میں جنگلات کی آگ بجھانے والا کینڈین جہاز تباہ ہوگیا، 3 افراد ہلاک

جمعرات کے روز ایک سی 130 کینیڈین طیارہ جو آسٹریلیائی علاقے الپائن میں لگی آگ کو بجھانے میں مصروف تھا گر کر تباہ ھوگیا۔ جس میں اس کے عملے کے تینوں افراد کی موت واقع ہوگئی ہے۔

غیر ملکی میڈیا کے مطابق یہ حادثہ آسٹریلیا کی ریاست نیو ساؤتھ ویلز کے جنگلات میں گذشتہ کئی ماہ سے لگی بے قابو آگ کو بجھانے کے دوران پیش آیا۔

امریکی میڈیا کے مطابق حادثے میں مرنے والے تینوں افراد امریکی شہری تھے جب کہ تباہ ہونے والا سی -130 طیارہ لیز پر تھا، جو کہ نیو ساؤتھ ویلز  انتظامیہ سے معاہدے کے تحت آگ بجھانے میں مصروف تھا۔

نیو ساؤتھ ویلز کے حکام کا کہنا ہے کہ ابتدائی طور پر حادثے کی وجوہات معلوم نہیں ہوسکی ہیں ، حادثے سے قبل طیارے کا رابطہ منقطع ہوگیا تھا جب کہ رپورٹ کے مطابق طیارہ گرنے کے بعد آگ کے بڑے شعلے بھی دیکھے گئے۔

حکام کا کہنا ہے کہ وہ حادثے کی وجوہات جاننےکے لیے تحقیقات کررہے  ہیں۔

خیال رہے کہ آسٹریلیا کے جنگلات میں گذشتہ سال لگنے والی آگ پر تاحال قابو نہیں پایا جاسکا ہے، گذشدہ دنوں ہونے والی بارشوں کے باعث آگ کی شدت میں کچھ کمی آئی ہے تاہم یہ اب تک مکمل طور پر قابو میں نہیں آسکی ہے۔

خوفناک آگ کے باعث متاثرہ ریاستوں میں 29 افراد ہلاک ہوچکے ہیں جب کہ سیکڑوں گھر اور لاکھوں ایکڑ اراضی تباہ ہوچکی ہے۔

آگ کے باعث سب سے زیادہ جنگلی حیات متاثر ہوئی ہے اور  50 کروڑ کے لگ بھگ جانور ہلاک ہوچکے ہیں جب کہ ماحولیاتی مسائل میں بھی اضافہ ہوا ہے۔

مزید پڑھیں:  نیب نے آصف زرداری کو16 مئی کو دوبارہ طلب کرلیا

آسٹریلوی ٹرانسپورٹ سیفٹی بیورو کا کہنا ہے کہ تفتیش کاروں کی ایک ٹیم کو شواہد جمع کرنے کے لیے جائے حاڈثہ پر بھیجا جا رہا ہے وہ وہاں جہاں تباہ شدہ جہاز کے مبلے سے شواہد اور جائے حادثہ کا تجزیہ کرنے اور موسم کے حالات کا جائزہ لے کر ایک رپورٹ مرتب کرے گی۔ ان کا کہنا ہے کہ ابتدائی رپورٹ میں 30 دن کا وقت درکار ہوگا۔ لیکن اگر تحقیقات میں کوئی حفاظتی مسئلہ سامنے نہ آیا تو اس کے اسٹیک ہولڈرز کو مطلع کردیا جائے گا۔